مے اَور شراب میں کیا فرق ہےَ؟

اِس پوسٹ کو دوسروں کے ساتھ شیئر کریں۔

لوگ پوچھتے ہیں کہ مے اَور شراب میں کیا فرق ہےَ؟ مے انگوروں کو کچل کر اِس سے نکالے گئے رس سے بنائی جاتی ہےِ۔ اِس میں الکوحل کا تناسب تقریباً 11 فی صد ہوتاہےِ۔ کلام مقدس کے سیاق و سباق میں دیکھا جائے تو فلسطینؔ میں بنی اسرائیلؔ مے بنانے کے عمل سے واقف تھے۔وہ اِسے کھانے کے ساتھ اَور ضیافتوں میں خاص کر شادی کی تقریبات میں پیتے تھے( ملاحظہ ہو مقدس یوحنا 2: 1-12)۔ خُداوند یسوؔع مسیح نے فصح کے کھانے کے موقعہ پر مے استعمال کی تھی۔ عہدِ جدید میں مے خُداوند یسوؔع مسیح کے خُون کی علامت تھی۔ اُس نے اپنے آخری کھانے کے موقعہ پر اپنے شاگردوں سے کہا” تم سب اِس میں سے پئیو۔ کیونکہ نئے عہد کا یہ میراخُون ہےَ۔جو بہتیروں کی خاطر گنا ہوں کی معافی کے لئے بہایا جاتا ہےَ”( مقدس متی 26: 28)۔ خُداوند یسوؔع مسیح نے اپنے شاگردوں کو حُکم دیتے ہوئے کہا کہ ” میری یادگاری کے واسطے یہی کیا کرو”( مقدس لوقا 22: 19)۔کاتھولک کلیسیا اِسی یادگاری کو قائم رکھتے ہوئے پاک ماس کی عبادت میں مے استعمال کرتی ہےَ۔ یہ  مے عام مے سے بالکل مختلف ہوتی ہےَ۔ اِس میں الکوحل کا تناسب تقریباً نہ ہونے کے برابر ہوتا ہےَ۔ اِس مے کو ساکرامنٹی مے کہا جاتا ہےَ۔ جو انگوروں کے رس سے کلیسیائی قوانین (کینن ) کے مطابق بنائی جاتی ہےَ۔ کینن میں لکھا ہےَ کہ ” مے قدرتی ہوئی چاہئیے جو انگوروں سے کشید کئے بغیر بنائی گئی ہو یعنی جس میں کوئی اَور جُز شامل کئے بغیر اِس کا خمیر اُٹھا ہو۔ اَور مے میں کھٹاس نہ ہو۔ اَور یہ سرکہ نہ بنی ہو۔ اَور نہ ہی اِس کا ذائقہ تبدیل کرنے اَور اِسے محفوظ کرنے کے لئے کوئی چیز شامل کی گئی ہو۔ جبکہ شراب عمل کشید سے بنائی جاتی ہےَ۔ اَور یہ ایسا مشروب ہےَ۔ جس میں الکوحل کا تناسب تقریبا ً 37 فی صد ہوتا ہےَ۔

Read Previous

انجیل ِمقدس برائے 27 جولائی 2020

Read Next

خُداوند کے ایلچی بنیں

error: Content is protected !!