دیداخے باب سوم: مُتلاشیوں کو نصیحت

اِس پوسٹ کو دوسروں کے ساتھ شیئر کریں۔

اے میرے فرزند! تو بُرے آدمی اَور اُس جیسے سب آدمیوں سے دُور رہ۔ غرور نہ کر۔ کیونکہ غرور قتل پر اُکساتا ہےَ۔ نہ ہی حاسد ہو۔ نہ جھگڑالو ہو اَور نہ جذباتی ہو۔کیونکہ قاتل اِن سب سے مُشتعل ہوتے ہیں۔میرے فرزند! شہوت پرست نہ ہو نا۔کیونکہ شہوت حرامکاری پر راغب کرتی ہےَاَور نہ ہی بیہودہ گفتگو کرنے والا ہو۔نہ آنکھیں اونچی کرنے والا ہو۔کیونکہ اِن سے زناکاری کے لئے رغبت پیدا ہوتی ہےَ۔میرے فرزند شگونوں کی پرواہ نہ کر۔ کیونکہ یہ بُت پرستی پر مائل کرتے ہیں۔نہ جادوگر بننا، نہ ہی نجومی، نہ ہی صافی بننا۔اَور نہ ہی اِن چیزوں کی چاہت کرنے والا ہونا۔کیونکہ اِن سے بُت پرستی پیدا ہوتی ہےَ۔ اَے میرے فرزند، جھوٹا نہ بننا۔ جھوٹ چوری کی جانب دھکیلتاہےَ۔نہ ہی دولت کو پیار کرنے والا ہونا۔ نہ ہی بے وقعت ہونا۔ کیونکہ اِن سب چیزوں سے چوری کی عادت پیدا ہوتی ہےَ۔ میرے فرزند ، بُڑبُڑانے والا نہ بننا۔ اِس سے کفر گوئی کا ارتکاب ہوتا ہےَ۔نہ ہی ضدی بننا۔ نہ ہی بدی کی سوچ سوچنے والا ہونا۔ کیونکہ اِن سب سے کفرگوئی جنم لیتی ہے۔بلکہ تُو حلیم بننا”کیونکہ حلیم زمین کے وارث ہوں گے “۔تو صبر سے برداشت کرنا۔ تو رحمد ل اَور بے ریا رہنا۔ اَور چپ رہنا۔ اَور نیک بننا۔ اَور جو الفاظ تو نے سُنے ہیں اِن سے ڈرتے رہنا۔اپنے آپ کو بُلند نہ کرنا۔اَور نہ ہی اپنی رُوح کو مغرور ہونے دینا۔ تیری روح باوقار لوگوں کی ہمنوا نہ ہو۔تو راستکاروں اَور عاجز لوگوں کے ساتھ چلنا۔اِن نیک آدمیوں پر جب حادثات آئیں۔تو یہ جانتے ہوئے اُنہیں قبول کرنا کہ خُدا کے بغیر کچھ پیش نہیں آتا۔

Read Previous

دیداخے باب دوم: دوسرا حُکم

Read Next

کاہل مَرد

error: Content is protected !!