دیداخے باب دوم: دوسرا حُکم

اِس پوسٹ کو دوسروں کے ساتھ شیئر کریں۔

تعلیم کا دوسرا حُکم یہ ہےَ کہ تو خُون نہ کرنا، زنا نہ کرنا، تواِغلامی نہ کرنا، تو حرامکاری نہ کرنا، تو چوری نہ کرنا، تو جادوُگری نہ کرنا، نہ ہی فال نکالنا، تو اسقاط ِ حمل سے بچے کا خون نہ کرنا اَور نہ ہی پیدا ہوتے بچے کو قتل کرنا۔تو اپنے ہمسائے کی چیزوں کا لالچ نہ کرنا۔ تو قسم نہ کھانا۔ تو جھوٹی گواہی نہ دینا۔ تو بدگوئی نہ کرنا۔ تو بُغض نہ رکھنا۔ تودوغلا نہ ہونا۔نہ ہی دو زبان ہونا۔ اِس لئے کہ دو زبان ہونا موت کا پھندہ ہے َ۔ تیری گفتار نہ تو جھوٹی ہو اَور نہ ہی کھوکھلی ہو۔ بلکہ عملاً پوری ہو۔ تونہ لالچی اَور نہ ہی حریص ہونا۔ نہ ہی مکار ہونا۔ نہ ہی بدی کو پھیلانے والا اَور نہ ہی شریر ہونا۔ تو اپنے ہمسائے کے خلاف بُرا مشورہ نہ لینا۔ تو کسی اِنسان سے نفرت نہ کرنا۔ بلکہ تو بعض کو تنبیہ کرنا۔ اَور بعض کے لئے دُعا کرنا۔ اَور بعض کو تو اپنی زندگی سے بھی بڑھ کر پیار کرنا۔

Read Previous

سکردؔو میں قدیم صلیب کی دریافت

Read Next

دیداخے باب سوم: مُتلاشیوں کو نصیحت

error: Content is protected !!